چہ گویمت کہ چونی

تبصرہ کیجیے