وحشت

ترے وحشی کی وحشت کی قسم ہے!
غزالاں دشت میں گھبرائے اس بار
– حسنین شہزادؔ

تبصرہ کیجیے